بریکنگ نیوزپاکستانشوبز
رجحان

معروف پاکستانی ٹک ٹاکر عائشہ اکرم کو مینار پاکستان پر بدتمیزی، کپڑےپھاڑدئے گئے، ہجوم ہوا میں اچھالتے رہے

"ہجوم بہت بڑا تھا اور لوگ ہماری طرف آرہے تھے۔ لوگ مجھے اس حد تک دھکیل رہے تھے اور کھینچ رہے تھے کہ انہوں نے میرے کپڑے پھاڑ ڈالے"

پاکستان میں سڑکوں اور شاہراوں پر عورتوں کو ہراساں کرنا دن بدن بڑھ رہاہے۔ گزشتہ دن لاہور میں ایک خوف ناک واقعہ پیش آیا جب معروف ٹک ٹاک مینارِپاکستان پر ٹک ٹاک بنارہی تھی دوستوں کے ساتھ اور وہاں موجود لوگوں کے ہجوم نے عائشہ نامی ٹک ٹاکر کو ہراساں کیا۔ معروف ٹک ٹاکر کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی جس میں دیکھایا گیا کہ ہجوم نے ان پر نا صرف تشدد کیا بلکہ کپڑے پھاڑ کے ہوا میں کئی بار اچھالتے رہے۔

ویڈیو فوٹیج

واقعے کے بعدجلد ہی عائشہ اکرم کی شکایت پر 400 افراد کے خلاف مقدمہ درج کر لیا گیا۔ ایف آئی آر سیکشن 354 A (عورت کے خلاف حملہ یا مجرمانہ طاقت کا استعمال اور اس کے کپڑے اتارنے)۔ ہجوم نے متاثرہ خاتون اور اس کے چھ ساتھیوں سے فون ، سونے کے زیورات اور نقدی بھی چھین لی۔ . فوٹیج اور دیگر شواہد کی بنیاد پر ملزمان کی شناخت کی جا رہی ہے ، اور جلد گرفتاریاں کی جائیں گی۔

عائشہ نے بتایا کہ اس کے ساتھیوں نے ہجوم سے بچنے کی بہت کوشش کی تاہم وہ بری طرح ناکام رہے۔ ہجوم بہت بڑا تھا اور لوگ ہماری طرف آرہے تھے۔ لوگ مجھے اس حد تک دھکیل رہے تھے اور کھینچ رہے تھے کہ انہوں نے میرے کپڑے پھاڑ ڈالے۔ کئی لوگوں نے میری مدد کرنے کی کوشش کی لیکن ہجوم بہت زیادہ تھا اور وہ مجھے ہوا میں پھینکتے رہے۔

اردو گلوبلی

اردو گلوبلی پاکستانی اردو نیوز ویب سائٹ ہے جہاں آپ کو ہر خبر تک بروقت رسائی ملے گی۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button