Uncategorized

کابل ایئرپورٹ کے باہر فائرنگ کا تبادلہ، ایک شخص ہلاک

کابل ایئرپورٹ کے شمالی دروازے پر نامعلوم افراد، افغان محافظوں اور مغربی ممالک کے فوجیوں کے درمیان فائرنگ کے تبادلے میں کم از کم ایک شخص ہلاک اور تین زخمی ہوئے ہیں۔ دوسری جانب افغان صوبے پنجشیر میں طالبان اور شمالی مزاحمتی فوج کے درمیان لڑائی کا آغاز ہوا ہے۔ ادھر دنیا کے سب سے ترقی یافتہ سات ممالک کی تنظیم جی سیون کے آئندہ اجلاس میں طالبان پر پابندیاں لگانے کا معاملہ زیر بحث آئے گا۔

خلاصہ
کابل پر طالبان کا قبضہ دوسرے ہفتے میں داخل ہو گیا ہے اور طالبان رہنما حکومت سازی کے لیے ملک کی سیاسی قیادت سے ملاقاتیں کر رہے ہیں۔
ملک چھوڑنے کے خواہش مند ہزاروں افراد کابل ایئر پورٹ کے باہر جمع ہیں جہاں اب تک کم از کم 20 افراد فائرنگ یا بھگدڑ میں ہلاک ہو چکے ہیں۔
امریکہ افغانستان سے نکالے گئے لوگوں کی منتقلی میں مدد کے لیے 18 کمرشل طیارے استعمال کیے جائیں گے۔ واشنگٹن 31 اگست تک افغانستان سے اپنا انخلا مکمل کرنا چاہتا ہے۔
طالبان نے دعویٰ کیا کہ امریکہ ’انخلا کا ڈرامہ‘ رچا کر اپنی شکست چھپانے کی کوشش کر رہا ہے۔
کابل کے شمال میں واقع وادی پنجشیر طالبان کے خلاف مزاحمت کا آخری بڑا گڑھ ہے۔ نائب صدر امراللہ صالح اور احمد شاہ مسعود کے بیٹے احمد مسعود نے یہاں سے طالبان کے خلاف بغاوت کی کال دی ہے

اردو گلوبلی

اردو گلوبلی پاکستانی اردو نیوز ویب سائٹ ہے جہاں آپ کو ہر خبر تک بروقت رسائی ملے گی۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button