Uncategorized

کابل میں یوکرین کا طیارہ ہائی جیک، ایران کی جانب لے جانے کی خبر

Afghanistan Crisis: کابل میں یوکرین کا طیارہ ہائی جیک، ایران کی جانب لے جانے کی خبر

کابل: افغانستان (Afghanistan) کی راجدھانی کابل (Kabul) میں یوکرین (Ukraine) کے ایک طیارے کو ہائی جیک (Hijacked) کرنے کی خبر ہے۔ یہ طیارہ یوکرینی شہریوں کو باہر نکالنے کے لئے افغانستان پہنچا تھا۔ یوکرین کے نائب وزیر خارجہ ییوگونی یینن (Yevgeny Yenin) نے منگل کو اس کی اطلاع دی۔ وہیں روسی میڈیا کا دعویٰ ہے کہ اس پلین کو ہائی جیک کرنے کے بعد ایران کی طرف لے جایا جا رہا ہے۔

روسی نیوز ایجنسی تاش کی خبر کے مطابق، یوکرین کے نائب وزیر خارجہ ییوگونی یینن (Yevgeny Yenin) نے کہا، ’اتوار کو کچھ لوگوں کے ذریعہ ہمارے طیارے کو ہائی جیک کرلیا گیا۔ ہائی جیکرس ہتھیاروں سے لیس تھے۔ منگل کو یہ طیارہ ہم سے غائب کردیا گیا۔ یوکرینی لوگوں کوایئرلیفٹ کرنے کے بجائے طیارے میں سوار کچھ لوگ اسے ایران لے گئے۔ ہمارے تین ایئر لیفٹ کوشش کامیاب نہیں ہوپائی، کیونکہ ہمارے لوگ ایئر پورٹ تک نہیں پہنچ پائے‘۔

حالانکہ، وزیر نے اس بات کی اطلاع نہیں دی کہ طیارہ کو کیا ہوا یا کیا کیو اس طیارہ کو واپس لانے کی کوشش کرے گا۔ یینن نے صرف اس بات کی تصدیق کی کہ پوری ڈپلومیٹک سروس وزیر خارجہ دمتری کولیبا (Dmitry Kuleba) کی قیادت میں پورے ہفتے کام کرتی رہی ہے۔

روسی نیوز ایجنسی تاش کی خبر کے مطابق، اتوار کو 31 یوکرینی شہریوں سمیت 83 لوگوں کے ساتھ ایک فوجی طیارہ افغانستان کی راجدھانی کابل سے یوکرین کی راجدھانی کیو پہنچا۔ یوکرین کے صدر دفتر نے بتایا کہ اس طیارے کے ذریعہ 12 یوکرینی فوجی اہلکاروں کی ملک واپسی ہوئی ہے۔ اس کے علاوہ، غیر ملکی صحافی اور مدد مانگنے والے کچھ لوگوں کو بھی باہر نکالا گیا ہے۔ یوکرین کے صدر دفتر نے یہ بھی بتایا کہ تقریباً 100 یوکرینی شہری ایسے ہیں، جو ابھی بھی افغانستان سے باہر نکالے جانے کے انتظار میں بیٹھے ہوئے ہیں۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button