بلاگز

‏افتخار چوہدری کے سامنے لاہور کے پراپرٹی ٹائکون ڈاکٹر امجد کا EOBI دو ارب کا فراڈ کیس آیا۔۔۔۔۔ فاطمہ خان

‏افتخار چوہدری کے سامنے لاہور کے پراپرٹی ٹائکون ڈاکٹر امجد کا EOBI دو ارب کا فراڈ کیس آیا ، آج تک EOBI کے پیسے واپس نہیں ہوئے کیس کے دوران ہی افتخار چوہدری کی بیٹی کی شادی ڈاکٹر امجد کے بیٹے سے ہو گئی ، اس کے بعد ڈاکٹر امجد نے ایڈن ہاوسنگ کے نام سے تیرہ ارب روپے عوام سے لوٹے
‏اور ملک سے فرار ہو گیا ، چیر مین نیب نے ڈاکٹر امجد اور مرتضی امجد ( داماد افتخار چوہدری ) کے وارنٹ جاری کئے اور انٹرپول نے دبئی میںُ مرتضی امجد کو گرفتار کر لیا ، لاہور ہائی کورٹ کی جج شہزاد خان ( جسے افتخار چوہدری نے تعینات کیا تھا )نے وارنٹ غیر قانونی قرارداد دے دئے
‏انٹرپول نے مرتضی کو رہا کردیا ، ڈاکٹر امجد اور مرتضی فیملی سمیت کینیڈا چلے گئے ، نیب نے ڈاکٹر امجد وغیرہ کو اشتہاری قرارداد دے کر اس کیُ پچیس ارب جائیداد کی نیلامی شروع کر دی ، جسٹس قاسم خان نےُ جسے افتخار چوہدری نے تعینات کیا تھا ، یہ نیلامی روک دی ، ڈاکٹر امجد واپس آ گیا
‏جسٹس قاسم نےُ گرفتاری سے روک دیا ، ڈاکٹر امجد نے تیرہ ارب کی پلی بارگین کیُ درخواست دی نیب نے کہا کہ liabilities پچیس ارب ہے کیونکہُ عوام کا تیرہ ارب دس سال استعمال کر کےُ پچیس ارب کے اثاثے بنائے گئے
‏ابھی یہ معاملہ طلب رہا تھا کہ کل رات ڈاکٹر امجد انتقال کر گیاہے ، مرتضی امجد ابھی مفرور ہے ، گیارہ ہزار متاثرین ایڈن دس سال سے تباہ ہو گئے نہ پلاٹ نہ گھر نہ ، رقم واپس ،
چوہدری کی بیٹی اور داماد کینیڈا ، بیٹا ارسلان بھی کروڑ پتی، آدھے جج جیب میں ، EOBI کے پینشنرز کے دوارب اور گیارہ ہزار متاثرین کے پچیس ارب دریا برد، انسانی تاریخ میں کوئی مثال جب زیر سماعت مقدمے کا ملزم ، جج کا سمدھی بنا ہو؟

فاطمہ خان

اردو گلوبلی

اردو گلوبلی پاکستانی اردو نیوز ویب سائٹ ہے جہاں آپ کو ہر خبر تک بروقت رسائی ملے گی۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button