بریکنگ نیوزپاکستانسیاست

تحریک انصاف کی حکومت پنجاب میں اپنی پہلی موٹروے تعمیر کرنے کیلئے تیار، فنڈز کی منظوری دے دی گئی

نجی شعبے کی شرکت سے 69 کلومیٹر طویل سیالکوٹ تا کھاریاں موٹروے 27 ارب 80 کروڑ روپے کی لاگت سے تعمیر ہو گی

تحریک انصاف کی حکومت پنجاب میں اپنی پہلی موٹروے تعمیر کرنے کیلئے تیار، فنڈز کی منظوری دے دی گئی، نجی شعبے کی شرکت سے 69 کلومیٹر طویل سیالکوٹ تا کھاریاں موٹروے 27 ارب 80 کروڑ روپے کی لاگت سے تعمیر ہو گی۔ تفصیلات کے مطابق وزیر منصوبہ بندی اسد عمر کی زیر صدارت ہونے والے حالیہ پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ اتھارٹی کے بورڈ کے اجلاس میں ہائی وے اتھارٹی اور فرنٹیئر ورکس آرگنائزیشن اور سلطان محمود اینڈ کمپنی کے درمیان پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ معائدے کی منظوری دی گئی ۔
وزیر منصوبہ بندی اسد عمر کی زیر صدارت پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ اتھارٹی کے بورڈ کے اجلاس میں سیالکوٹ کھاریاں موٹر وے کی پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ پر تعمیر پر غور کیا گیا۔

اعلامیہ کے مطابق اجلاس میں نیشنل ہائی وے اتھارٹی اور فرنٹیئر ورکس آرگنائزیشن اور سلطان محمود اینڈ کمپنی کے درمیان پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ معائدے کی منظوری دی گئی ۔

اسد عمر نے کہاکہ ملک میں نجی شعبے کی شرکت سے 27 ارب 80 کروڑ روپے کی موٹر وے منصوبہ بنایا جائے گا ، منصوبہ کی منفرد سرمایہ کاری سے ملک میں ترقیاتی منصوبوں کی سرمایہ کاری میں بڑا آغاز ہو گا ۔ انہوںنے کہاکہ بوٹ بنیاد پر تعمیر ہونے والی چار لین 69 کلومیٹر طویل شاہراہ کی لاگت 27 ارب 80 کروڑ روپے ہے ، فنانشل کلوز کے بعد منصوبے کو دو سال کی مدت میں مکمل کیا جائے گا ،منصوبہ پر ٹول وصولی کی مدت 25 سال رکھی گئی ہے ،منصوبے کو لاہور سیالکوٹ موٹر وے اور مستقبل میں تعمیر ہونے والی کھاریاں راولپنڈی سے منسلک کیا جائے گا۔
یہاں واضح رہے کہ رواں برس مئی میں سیالکوٹ کھاریاں موٹروے منصوبے کا ٹینڈر جاری کیا گیا تھا۔ جبکہ منصوبہ کی کمرشل، فنانشل فزیبیلٹی سٹڈی ، لین دین کے طریقہ کار ، اور پروپوزل پیکج کی درخواست کی منظوری مارچ میں دی گئی تھی۔ اس حوالے سے وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے بتایا تھا کہ شمالی پنجاب کے لیے موٹروے وزیراعظم عمران خان کا ایک بہت بڑا تحفہ ہوگا۔ اس موٹروے کی تعمیر کے بعد جہلم کا اسلام آباد سے فاصلہ صرف 45 منٹ کا رہ جائے گا۔ گوجر خان، سوہاوہ اور دینہ اسلام آباد کے نواحی علاقے بن جائیں گے، چکول، جہلم، کھاریاں، لالہ موسیٰ، وزیر آباد کی معاشی اہمیت میں بھی بے پناہ اضافہ ہو گا۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button