پاکستانسیاست

ریاستی ادارے الیکشن چوری کرتے ہیں، ورنہ الیکٹرانک ووٹنگ مشین سے بہتر نظام دے سکتا ہوں

پہلےطےکرلیں کہ الیکشن چوری نہیں ہوگا تو میں الیکٹرانک ووٹنگ مشین سے بہتر نظام دے سکتا ہوں، جب تک نظام آئین کے مطابق نہیں چلے گا، ہم آگے نہیں بڑھ سکتے، سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی

سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کے مطابق ہر بار ریاستی ادارے الیکشن چوری کرتے ہیں، پہلےطےکرلیں کہ الیکشن چوری نہیں ہوگا تو میں الیکٹرانک ووٹنگ مشین سے بہتر نظام دے سکتا ہوں- تفصیلات کےمطابق نجی ٹیلی ویژن چینل کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے ن لیگ کے مرکزی رہنما اور سابق وزیراعظم پاکستان شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ میں الیکٹرانک ووٹنگ مشین سے زیادہ بہتر نظام ملک کو دے سکتا ہوں، لیکن پہلے یہ طے کر لیا جائے کہ الیکشن چوری نہیں ہو گا، انہوں نے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے کہ ہر بار ریاستی ادارے الیکشن چوری کر لیتے ہیں، ایسے میں الیکٹرانک ووٹنگ مشین متعارف کروانے کا کوئی فائدہ نہیں ہے- انہوں نے کہا کہ جب تک نظام آئین کے مطابق نہیں چلے گا، ہم آگے نہیں بڑھ سکتے- انہوں نے کہا کہ مجھے ابتخابات سے نہیں ملکی نظام سے غرض ہے- انہوں نے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے مزید کہا کہ پی ڈی ایم کسی اتحاد کا نہیں بلکہ ایک تحریک کا نام ہے- دوسری جانب وفاقی وزیر برائے سائنس و ٹیکنالوجی سینیٹر شبلی فراز کا کہنا ہے کہ ہم نے 90 روز کے اندر الیکٹرانک ووٹنگ مشین بنائی جس سے 15 سیکنڈ میں نتیجہ ملے گا۔
شبلی فراز نے انجینئرنگ یونیورسٹی پشاور میں تقریب سے خطاب کے دوران کہا کہ ہم نے انتخابی اصلاحات پر کام کیا، ووٹنگ میں لوگوں کے بجائے ہم ٹیکنالوجی کا استعمال کریں گے۔ وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ الیکٹرانک ووٹنگ مشین میں سب کچھ شفاف اور آسان ہو جائے گا، الیکٹرانک ووٹنگ مشین کا تعلق انٹرنیٹ سے نہیں ہے یہ ہیک نہیں ہو سکتی، ووٹنگ مشین میں ووٹر کا ریکارڈ ہوگا، 15 سیکنڈ میں نتیجہ ملے گا۔
تقریب سے خطاب کے دوران شبلی فراز کا کہنا تھا کہ عام طریقے سے گنتی میں 18 لاکھ ووٹ ضائع ہوتے ہیں، الیکٹرانک مشین سے ووٹ ضائع نہیں ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ الیکٹرانک ووٹنگ مشین سے جمہوریت کو فائدہ ہے، آئندہ الیکشن ٹیکنالوجی کی مدد سے ہو گا، ووٹنگ مشین میں ووٹر کی پرائیویسی محفوظ رہے گی۔ سینیٹر شبلی فراز کا مزید کہنا تھا کہ ہم چاہتے ہیں کہ اپوزیشن بھی اپنے ماہرین لا کر ووٹنگ مشین کا معائنہ کریں، بغیر دیکھے ووٹنگ مشین کو رد کرنا ٹھیک نہیں ہے، ہمیں بدلتی دنیا کے ساتھ خود کو بدلنا ہوگا، یہ دور ٹیکنالوجی کا ہے اور ہمیں ٹیکنالوجی کی طرف جانا ہوگا۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button