Uncategorized

عمل میں چھپی نیت ہی انسان کی حقیقت ہے

اللہ تعالی نے بنی نوع انسان کو اس دنیا میں اپنا نائب بنا کر بھیجا نائب وہ ہی شخص ہوتا ہے جو اپنے مالک یا سردار کی پیروی کرے۔ تو اللہ کی پیروی کرنا تو انسان کے اندر رکھ دیا گیا اور ظاہر ہے اللہ کی پیروی کا مطلب خود کو اللہ کی نافرمانی سے بچانا اور اللہ کی بندگی کرنا ہے۔ سوال یہ ہے کہ جب اللہ نے انسان کو اپنا نائب بنایا تو انسان شیطانی اعمال میں کیسے ملوس ہوا ؟ بے شک اللہ عزوجل نے انسان کو اپنا نائب بنا کر بھیجا مگر انسان زمین پر اتر کر اس نائب کے عہدے پر خود کو فائز رکھنا چاہتا ہے یا نہیں یہ اللہ نے انسان کے اختیار میں دے دیا۔ انسان کو اس بات کا اختیار دے دیا کہ وہ رحمان کا بندہ بن کر زندگی گزارنا چاہتا ہے یا پھر شیطان کا۔ انسانی زہن اور دل میں اللہ نے اچھائی اور برائی کو سمجھنے والے سارے سینسرز لگا دیے۔ انسان بھلا کرے یا برا یہ قلی طور پر انسان کے اپنے بس میں ہے۔ شیطانی یا روحانی انسان کے اندر سے جو سوچ محرک بنتی ہے ویسا ہی عمل انسان سر انجام دیتا ہے ۔

اعمال میں دو قسم کے اعمال ہوتے ہیں۔ نیک اور بد اعمل، ان میں کچھ اعمال تو ایسے ہیں جو زمانے میں بد ہی مشہور ہیں جیسے شراب پینا ،زنا کرنا ، قتل ، چوری کرنا وغیرہ، مگر کچھ ایسےاعمال بھی ہیں کہ جن کے ذریعے شیطان نے انسان کو دھوکے میں ڈالا یہاں ان اعمال کی بات ہو رہی ہے کہ جن کے سر انجام کرنے کے پیچھے کسی بری نیت کا عمل دخل ہوتا ہے جو بظاہر تو مخلوق میں اچھے سمجھے جاتے ہیں لیکن درحقیقت وہ اللہ کے دربار میں مقبول نہیں ہو پاتے مثال کے طور پر صدقہ و خیرات کرنا ایک بہترین عمل ہے اور اللہ کے ہاں اس کا بہت بڑا اجر ہے لیکن اگر صدقہ و خیرات کرتے وقت ریاکاری یا پھر غرور جیسے جذبات اس عمل میں چھپے ہوئے ہوں تو پھر اللہ کے گھر اس عمل کی کوئی وقعت نہیں، بالکل اسی طرح کسی کی مشکل میں مدد کرنا اور یہ سوچنا کہ وقت آنے پر اسے بلیک میل کرکے اپنا کام نکلواؤ گا یا پھر اس جیسی کوئی اور نیت رکھنا بھی مدد کرنے والے کی نیکی کو اللہ کے گھر مقبول نہیں ہونے دیگی۔ اللہ تعالیٰ نے ان اعمال کو جانچنے کے لیے ایک چھنی انسان کے دل اور دماغ میں فٹ کی جس میں اعمال اور نیت کو چھان کر الگ الگ کیا گیا تا کہ انسان کے اعمال کے پیچھے چھپی نیت کی کوالٹی کو جانچا جا سکے۔ یہ امتحان بہت سخت اور حتمی ہوتا ہے، اس کے زریعے انسان کے عمل کی اصل حالت اور کلئی کھول کے سامنے آجاتی ہے اور انسان اس امتحان میں اپنے کئی اعمال کھو دیتا ہے کہ جن پر اسے بڑا ناز تھا یعنی وہ اعمال جو اس نے بہت فخر سے کیے تھے اور اسے یقین تھا کہ وہ ان نیکیوں کی وجہ سے بخش دیا جائے گا لیکن چونکہ ان اعمال کے پیچھے اس کی نیت میں کھوٹ تھا اس لئے اللہ تعالی امتحان کے ذریعے اس کے عمل اور نیت کو علیحدہ علیحدہ کرکے اس کے سامنے رکھ دیگا اور پھر فیصلے کی اس گھڑی میں انسان کے پاس سوائے پچھتاوے کے کچھ بھی باقی نہ رہے گا ۔
اللہ وحدہٗ لاشریک ہے اور مخلصی کو پسند فرماتا ہے۔ اخلاص کی جو قدر و قیمت اللہ تعالی کے گھر ہے اس کا اندازہ لگانا انسانی عقل سے باہر ہے۔ یعنی اخلاص انسان کے اعمال کو اس طرح سپورٹ کرتا ہے جیسے عمارت کی بنیادیں عمارت کو کھڑا ہونے میں مدد دیتی ہیں۔ بنیاد جتنی مضبوط ہوگی بلڈنگ اتنی ہی دیر پا ہوگی۔ بالکل اسی طرح نیت میں جس قدر اخلاص موجود ہوگا عمل نیکی کے سانچے میں اتنا ہی پختہ ہوگا۔ جن لوگوں کےاعمال کچھ اور۔۔۔۔اور نیت کچھ اور ہوتی ہے انہیں اسلام نے منافقین کا ٹائٹل دیا ہے اور اللہ تعالی منافقت کو اتنا برا سمجھتا ہے کہ جہنم کے سب سے نچلے طبقے میں منافقین کو جگہ دی جائے گی۔
مسلمان کی شان اخلاص میں پوشیدہ ہے۔ عبادات سے لے کر ، دین اور دنیا کے تمام معاملات میں اخلاص انسان کے کھرے اور کھوٹا ہونے کو ڈفائن کرتا ہے۔ آپ نے، نیت صاف منزل آسان والی کہاوت تو سنی ہی ہوگی۔ نیت کی سچائی انسان کو نیکی کے پر خطر راستے پر روشنی فراہم کر کے ڈگمگانے سے بچاتی ہے۔ دین اور دنیا کے روز مرہ کے کاموں میں چھپی ہوئی بری نیت تمام عمل کو برباد کر دیتی ہے۔ انسان اللہ کے ہاں ریا کار، منافق، دھوکے باز اور جھوٹا لکھا جاتا ہے۔ دنیا میں تو آپ اپنے لیونگ اسٹیٹس، پیسے ، اعلیٰ تعلیم کے زریعے مشہور ہو سکتے ہیں اور دنیا والوں میں آپ کے تذکرے ان سب فنا ہونے والی چیزوں کے بل بوتے پر ہو سکتے ہیں لیکن اگر آپ آسمان پر خود کی کوئی پہچان بنانا چاھتے ہیں تو اس کے لیے اعمال کو خالص رکھنا ہوگا۔ خالص اعمال آسمانوں میں تذکرے کرواتے ہیں۔ یاد رکھیں کوئی بھی نیک عمل دنیا کی نظر میں چاہے کتنا ہی معمولی کیوں نہ ہو لیکن اگر وہ پورے اخلاص کے ساتھ کیا گیا ہے تو اللہ تعالی کے ہاں اس عمل کی وقعت و اہمیت اتنی ہے کہ الفاظ میں بیان نہیں ہو سکتی۔ انسان کی اصل پہچان عمل نہیں بلکہ عمل میں چھپی ہوئی اچھی یا بری نیت ہے اور اعمال کے پیچھے اچھی اور بری نیت رکھنے کا اختیار اللہ تعالی نے انسان کو دیا ہے

اردو گلوبلی

اردو گلوبلی پاکستانی اردو نیوز ویب سائٹ ہے جہاں آپ کو ہر خبر تک بروقت رسائی ملے گی۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button