بین الاقوامی

برطانیہ اور امریکا میں ٹِک ٹاک نے یوٹیوب کو پیچھے چھوڑدیا

: گزشتہ چند دنوں سے پہلی مرتبہ یہ ہوا ہے کہ ایپ کے لحاظ سے یوٹیوب کا گراف نیچے گیا ہے اور اس کی جگہ ٹک ٹاک نے لے لی ہے۔ کم ازکم امریکا اور برطانیہ کے اعدادوشمار تو یہی بتاتے ہیں

ٹک ٹاک کا زیادہ استمال یوٹیوب کو بھی پیچھے چھوڑ گیا۔ جو ایک حیرت انگیز بات ھے۔ اور یوٹیوب کو پیچھے چھوڑنا ٹک ٹاک کی کامیابی ھے۔

مختلف ایپ کے استعمال اور ڈیٹا کے بہاؤ کو نوٹ کرنے والی غیرجانبدار کمپنی ’ایپ اینی‘ نے کہا ہے کہ اب ایپ کی سطح پر ٹک ٹاک نے یوٹیوب کی جگہ لے لی ہے اور اور اوسط امریکی اور برطانوی افراد اسے زیادہ استعمال کررہے ہیں۔ تاہم براؤزر کے استعمال کے لحاظ سے یوٹیوب اب بھی آگے ہے۔

ایپ اینی کمپنی کے مطابق ٹک ٹاک ایپ نے ’اسٹریمنگ اور سوشل میڈیا پس منظر کو الٹ کر رکھ دیا ہے،‘ تاہم اگر وقت کی بات کی جائے تو اب بھی یوٹیوب سرِفہرست ہے ۔ یوٹیوب گوگل کی ملکیت ہے اور اسے ہر ماہ دو ارب افراد استعمال کرتے ہیں جبکہ 2020 کے وسط تک ٹاک ٹاک دیکھنے والوں کی تعداد 70 کروڑ تھی۔

اس کی وجہ یہ ہے کہ لوگوں کی بڑی تعداد نے یوٹیوب پر اپنے اکاؤنٹ بنارکھے ہیں جسے وقت کی سرمایہ کاری کہا گیا ہے۔ تجزیہ کاروں کے مطابق ٹک ٹاک نے رقم کمانے کے کئی طریقوں سمیت اسے مزید جدید بنانے کے جو ٹولز پیش کئے ہیں وہ اسے مزید مقبول بناسکتے ہیں۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button