بین الاقوامی

حقیقی وقت میں کیمیائی عمل کی تصویر لینے والا نینو کیمرہ

کیمبرج: کیمبرج یونیورسٹی کے سائنسدانوں نے ایک بہت ننھا منا نینو کیمرہ بنایا ہے جسے ’سالماتی گوند‘ سے تیار کیا گیا ہے۔ یہ حقیقی وقت میں کیمیائی تعاملات (کیمیکل ری ایکشن) کے مشاہدے میں مدد دیتا ہے۔

اس کے لیے انہوں نے بہت چھوٹے سیمی کنڈکٹر نینوکرسٹلز تیار کئے ہیں جنہیں کوانٹم ڈوٹس بھی کہا جاتا ہے۔ اسےسونے کے نینوذرات سے جوڑا گیا ہے جسے ایک خاص قسم کی سالماتی گوند سے جوڑا گیا ہے۔ اس گوند کو ’کیوکربیٹیورل (سی بی ) کا نام دیا گیا ہے۔ پانی ملانے پر یہ سیکنڈوں میں جڑجاتے ہیں اور ان کا استعمال یہ ہے کہ حقیقی وقت میں ان سے کیمیائی تعاملات کا مشاہدہ کیا جاسکتا ہے۔

یہ کیمرہ سیمی کنڈکٹر کے اندر بنایا گیا ہے۔ اس میں الیکٹرون کی منتقلی کا عمل عین فوٹوسنتھے سز (ضیائی تالیف) کی طرح ہوتا ہے۔ اب یہاں نینوذرات سینسر کا کام کرتےہیں اور طیفی (اسپیکٹرواسکوپک) طریقے پر کام کرتا ہے۔ اس طرح کیمرے کیمیائی عمل دیکھنے کے قابل ہوجاتا ہے۔ اس طرح ہم وہ کیمیائی تعاملات جان سکیں گے جن کے متعلق نظری معلومات تو ہیں لیکن ٹھوس ثبوت اب تک نہیں مل سکے ہیں۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button