بریکنگ نیوزصحت

نیند اور لذت کی خرابیاں کیوں ھوتا ھے۔کیا وجوہات ھے۔

انسانی جسم کا سسٹم بائیولوجیکل کلاک پر کام کرتا ہے۔ انسان کے اس دنیا میں آئے پہلے دن سے جسم صبح سویرے جاگنے اور رات کو جلدی سونے کی نیچرل عادت میں ڈھل چکا ہے

کیونکہ یہ نیچرل سسٹم دماغ اور ہارمون کی صحت کو سامنے رکھتے ھوئے ہی قدرت نے تخلیق کیا ھے ۔
رات دیر تک جاگنے کی وجہ سے ہمارا نارمل بائیولوجیکل کلاک سسٹم بے حد متاثر ھوتا ہے ، نیند لانے کا فنکشن ایک ہارمون پورا کرتا ہے جسے ” میلاٹونن ہارمون ” کہتے ہیں ہمارے جسم کی ڈیفالٹ سیٹنگز کو سورج ڈوبنے کے سگنلز ملتے ہیں اور ہلکی تاریکی آسمان پہ نظر آتی ہے تو یہ ہارمون ریلیز ہونا شروع ہو جاتا ھے نتیجتاً اگلے ایک یا دو گھنٹوں میں ہمارا جسمانی سسٹم سست پرنا شروع ھوجاتا ھے اور نیند محسوس ہوتی ہے لیکن ہم اپنی نیند کی خواہش کو مارتے رہتے ہیں چاہے وہ زبردستی کی صورت میں ہو یا نیکوٹین یعنی چائے کافی کی صورت میں ھو یا پڑھائی کی صورت میں یا پھر فیس بک ہو یا چٹ چیٹ کا بہانہ ھو ، نتیجتاً ہم مسلسل غلط روٹین کی وجہ سے میلاٹونن کے جلدی ریلیز ھونے کے عمل کو روک دیتے ہیں بالآخر یا تو ہماری نیند ختم ھو جاتی ھے یا پھر تہجد کے وقت آتی ہے۔
صبح 3 سے 4 بجے کے بعد میلاٹونن کم مقدار میں بنتا ہے لیکن اسکے کم مقدار میں بننے سے ایڈرنالین جو سٹریس ہارمونز ھے جو اپنے ساتھ دیگر ہارمونز ” نوریپینفرین "کی مقدار کو بھی بڑھا دیتا ھے جس سے جسم شدید طاقت ، چستی پھرتی اور توانائی محسوس کرتا ہے کہ جسم تھکن محسوس ہی نہیں کرتا بڑے بڑے کام کر کے بھی تازہ دم رھتا ھے اس ذہنی حالت کو bipolar disorder سے بھی منسلک کیا جاتا ھے ۔
وقت پہ نیند نہ آنے کی وجہ سے جب یہ سٹریس ہارمون ریلیز ہوتے ہیں تو ہماری ذہنی اور جنسی ، جسمانی صحت کا جنازہ نکال دیتے ہیں ۔

🎀1۔ بال گرنا اور پتلے ہونا،، جسم کے مختلف حصوں پہ بال آنا،، رنگ خراب ھونا ،، سکن کی چمک ختم ھونا ،، دل کی دھڑکن تیز رہنا ،، بڑھاپا جلدی چہرے پہ نظر آنا ،، جسمانی کمزوری اور مرد خواتین کی بہت سی ذہنی جنسی بیماریاں جن میں premature ejaculates اور Erection issues اسکے ساتھ حیض کی کمی یا زیادتی ،،چہرے پہ دانے نکلنا وغیرہ بھی شامل ھے ۔

🎀2۔ وزن بڑھتے جانا ،، تھائیرائیڈ گلینڈز کے مسائل ،، چکر آنا ،، سر درد ،، متلی ،، خون میں گلوکوز کی مقدار بڑھنا جس سے زیابیطس کا اشو بھی شروع ھو جاتا ھے ۔

🎀3 ۔ بھوک کی کمی یا بہت زیادہ بھوک محسوس ھونا ۔

🎀4۔ افسردگی،، سٹریس ،، کاہلی ،، چڑچڑاپن ،، غصہ ،، کام میں پورا دھان نہ دے پانا جس سے ٹائمنگ اشو بھی بے حد متاثر ھوتا ھے کیونکہ ٹائم کو ہمیشہ ایک صحت مند دماغ ہی بڑھا سکتا ھے لیکن جب شریانیں سٹریس کی وجہ سے سکڑ جائیں گی تو خون کا بہاو کم ھوتا جائے گا جس سے عضو کی مردہ حالت دن بدن بڑھتی جائے گی ۔

اب اگر کوئی یہ کہے کہ جی میں لیٹ تو سوتا ہوں لیکن 8 گھنٹے کی صبح پوری نیند بھی لیتا تو مجھے اثر نہیں پڑتا میں فٹ ھوں ۔ ایسا نہیں ہوتا ، فرق پڑتا ہے اور بہت زیادہ پڑتا ہے،،نیند وہی ہے جو رات کو قدرت کے منتخب کردہ ٹائم پہ لی جائے یعنی عشاء کے فورا بعد ، میلاٹونن ہارمون رات کے وقت ریلیز ہوتا اور صبح کے وقت اسکا اثر کم ہوتے ہوتے ختم ھو جاتا ھے اگر ساری رات جاگ کر صبح کے وقت سوئے تو یہ نیند میلاٹونن کی وجہ سے نہیں بلکہ تھکاوٹ کی وجہ سے ذہن پر غنودگی سوار کرتی ھے جبکہ یہ نیند گہری نہیں ھوتی بلکہ سوتے جاگنے والی کیفیت سوار رھتی ھے اور اپکو نیند کے بعد بھی ذہنی جسمانی سکون میسر نہیں ھو گا بلکہ ٹانگیں بے چینی اور چھاتی میں تتلیاں اڑتی محسوس ھونگیں جلدی کھانا کھائیں اور تمام کام عشاء تک ختم کریں جلدی سوئیں تاکہ اپکا ذہن اپنی طاقت کو ہر کام میں استعمال کرنے میں خوشی محسوس کرے مکمل صحت مند سوچ ہی خوشی اور کام کو enjoy کرنے کی اہلیت رکھتی ھے ورنہ ایک تھکی ھوئی بیمار سوچ خوشی کو بھی محسوس کرنے سے قاصر رہتی ھے ۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔🚨علاج 🚨۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

روزانہ رات کو سر اور پیروں کے تلوؤں پر سرسوں کے تیل کی مالش کی جائے ناف میں ناریل یا سرسوں کا تیل ڈالنا عادت بنا لی جائے ۔ ⚓ناشتے میں کبھی چائے نہ پیئیں دودھ دہی سے آغاز کیجئے چائے کو بھول جائیں ۔

⚓_خوراک میں انڈے چکن کا استعمال نہ ھونے کے برابر کیجئے لیکن ساتھ میں سلاد کے پتے کھیرے جتنا زیادہ ھو سکے استعمال کیجئے فروٹس بھی زیادہ لیجئے ۔

⚓_صبح صبح لمبے لمبے سانس لیجئے روزانہ رات سونے سے پہلے نیچے دیئیے گئے لنک پہ موجود تھراپی کو سنئیے جس سے اپ اپنی نیچرل نیند کی ٹائمنگ پہ واپس ا جائیں گے انشاء اللہ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button