صحت

💠 نہار منہ پانی اور قوت باہ 💠

نہار منہ پانی پینا کیوں ھر کسی کیلئے بہتر نہیں

ابو سعید الخدریؓ سے روایت ہے کہ رسول اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا”من شرب الماء علی الریق انتقضت قوتہ”،”جس نے نہار منہ پانی پیا اس کی اپنی طاقت کم ہو گئی”۔(المعجم الاوسط للطبرانی/حدیث 4646/جلد 5/ صفحہ52/دارالحرمین القاہرة مصر۔

2) سیدنا ابو ہریرةؓ سے مروی ایک لمبی روایت میں یہ الفاظ ہیں”من شرب الماء علی الریق انتقضت”،”جس نے نہار منہ پانی پیا اس کی اپنی طاقت کم ہو گئی”
(المعجم الاوسط للطبرانی/حدیث 6557/جلد 6/ صفحہ334/دارالحرمین القاہرة مصر)

بہت سے لوگ ان احادیث کو ضعیف مانتے ہیں اور کچھ لوگ درست کہتے ہیں آگے اللہ بہتر جانے ۔

3) ابن القیمّ بھی نہار منہ پانی پینے سے منع کرتے تھے اور اسی حوالے سے اپنی کتاب میں امام شافعی کا یہ قول نقل فرماتے ہیں”چند چیزیں انسان کے بدن کو کمزور کر دیتی ہیں” بیت الخلاء سے فارغ ہو کر پانی پینا ، نہار منہ پانی پینا ، بہت زیادہ غم و فکر میں رہنا”۔
4) جدید تحقیق کے مطابق خالی پیٹ پانی پینا جوڑوں کے درد کا سبب بنتا ہے برطانیہ اور امریکا میں گھٹنوں کے مریضوں کو خالی پیٹ پانی پینے سے منع کیا جاتا ہے”۔

پانی ایک نعمت ھے صحت ھے مگر غلط اوقات میں پانی کا استعمال نعمت کو زحمت بنا دیتا ھے کمر میں درد پانی کی کمی سے بھی ھوتی ھے ڈسک میں موجود مواد میں پانی کم ھو جاتا ھے جس سے جسم وزن برداشت نہیں کر پاتا اور نہار منہ پانی کے استعمال سے بھی کمر کی مضبوطی میں کمی آتی ھے ۔

نہار منہ پانی یا ٹھنڈا پانی سارے دن میں استعمال کرنے سے غذائی نالی کے مسلز کی کارکردگی بہت متاثر ھوتی ھے ٹھنڈے پانی سے خون کی شریانیں سکڑ جاتی ہیں جس سے مسلز تک خون کی روانی میں رکاوٹ پیدا ھوتی ھے کیونکہ گرم نالیوں پر اچانک ٹھنڈک انکو ایک دم خطرناک دھچکا دیتی ھے۔

کسی صحت مند اور نارمل انسان کا نہار منہ پانی پینا اسکے معدے کی کارکردگی کو بے حد متاثر کرتا ھے وہ اس طرح کہ معدہ ساری رات خالی چلتا رھتا ھے معدے میں اللہ پاک نے ایسے ایسڈ رکھے ھوئے ہیں جو ھماری خوراک کو گلا کر ہضم کرنے میں مدد دیتے ہیں ساری رات کام کرتے رھنے کی وجہ سے معدے میں خود کار نظام کے تحت حرارت قائم رھتی ھے لیکن کھانا ہضم ھو کر جزو بدن بننے کا کام ساری رات میں مکمل ھو چکا ھوتاھے صبح خالی معدے میں موجود گرمائش اتنی زیادہ نہیں ھوتی جب ھم نہار منہ پانی پیتے ھیں اس پانی کو ہضم کرنے کے لئے معدہ پانی کو جسم کے ٹمپریچر کے مطابق کرتا ھے جس میں اس کو طاقت درکار ھوتی ھے اور یہ طاقت سب سے پہلے دل سے حاصل کی جاتی ھے جس سے دل کو پہلے سے کہیں زیادہ زور سے خون کو پمپ کرنا پرتا ھے ساری رات کے روزے کے بعد گرم خالی معدہ اور سیلز انرجی کے کھانے کے انتظار میں ھوتے ہیں اور آگے سے انکو سادا پانی منہ پہ مار دیا جاتا ھے ۔انرجی کی بھوک لئے سادے پانی کو ہضم کرنے کے چکر میں معدہ ٹھنڈا ھو جاتا ھے جیسے گرم توے پہ پانی ڈالا جائے تو توے کی گرمی ساری پانی کی وجہ سے دھواں بن کے ختم ھو جاتی ھے اسی طرح معدہ بھی ٹھنڈا پر جاتا ھے جب معدہ ٹھنڈا پرتا ھے اس سے جُڑے دوسرے نظام جس میں ھمارے اعصابی دماغی نظام ،گھٹنے ،جگر اور کمر ریڑھ کی ہڈی جسکے ساتھ نرم ٹشوز اعصابی اور مسلز کی گہری جڑیں multifidus ..semispinalist..
rotatores
کا گروپ شامل ھے دن بدن وہ بھی متاثر ھوتے ھیں رات سے خالی معدے کو صبح انرجی کی جگہ خالی پانی ملنے کی وجہ سے سیلز سست پر جاتے ہیں اپنی طاقت کھو دیتے ہیں جسکی وجہ سے سارا دن بھوک کم لگتی ھے جسم چربی بنانا شروع کر دیتا ھے اسکا سب سے بڑا نقصان مرد کی قوت باہ کو ھوتا ھے انسان کی صحت کا راز اسکے معدے کی تندرستی اور طاقت میں چھپا ھے مرد میں سیکس کے حوالے سے کمزوریاں بھی پیدا ھونا شروع ھو جاتی ہیں

معدہ ایک ایسی مشینری ھے وہ پورے جسم کا ہیڈ آفس ھے اگر گرم رھے گا کام پروپر کرتا رھے گا تو جسم چست رھتا ھے اور اگر کسی وجہ سے معدہ ٹھنڈا ھو جائے تو خوراک کو صحیح طریقے سے ہضم نہیں کر پاتا غیر ہضم شدہ خوراک جسم کو طاقت نہیں بلکہ چربی دیتی ھے بد ہضمی گیس ، کمزوری جسم کا ڈھیلاپن عام دیکھنے کو ملتا ھے اسکے ساتھ جب رمضان میں سارے دن کے بعد افطاری میں ٹھنڈا پانی پیا جائے تو ہائے ماشاءاللہ سمجھیں معدہ گیا کام سے …اسکے علاوہ نہار منہ پانی پینے سے معدے میں موجود فائبر نکل جاتا ھے اور فائبر جسم میں ذیابیطیس ؛ بلڈ پریشر ؛ کولیسڑول ؛ پیٹ کا کینسر اور وزن کم کرنے والے عناصر کو کنڑول کرتا ھے .. اور یہ سب کتابی باتیں نہیں ہیں میں خود اس چیز پہ تجربہ کر چکی ھوں معدے کی 80 فیصد خرابیاں ھمارے کھانے پینے کے غلط اوقات کی وجہ سے پیدا ھوتی ھیں … گردوں پھیپھڑوں کی خرابی یا کسی قسم کی پتھری یا ایسی بیماریاں جن میں معدہ تیز مرچ مصالحہ کی وجہ سے تیزابی مادوں سے بھر جائے ایسے مسلوں میں نہار منہ نیم گرم پانی باڈی کے ٹمپریچر کے مطابق پینا اچھے نتائج دے سکتا ھے اگر اس میں شہد مکس کر لیا جائے تو زیادہ بہتر ھے …اور وہ بھی مستقل پیتے نہیں رھنا کچھ دن پینا ھے پھر کچھ دن چھوڑ کر پھر سے شروع کرنا ھے… خود کا خیال رکھیں سائنس کی ھر سائنس ھر انسان کو فائدہ نہیں دیتی ..

بو علی سینا کا کہنا ھے کہ ٹھنڈا پانی پینے والے کو زندگی میں دل کی تکلیف ضرور ھوتی ھے ۔

میرا کام صرف آگاہ کرنا تھا ،،، عمل کروانا نہیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button