بلاگز

انسانی جسم دو طرح کی بیماریوں میں مبتلا ہوتا ہے۔ جسمانی امراض۔ روحانی امراض

ہماری صحت ہمیں زندگی کا مزہ دیتی ہے جو بہت خوبصورت بھی ہو سکتا ہے اور عزیت ناک بھی آج جو میں بتانے جا رہا ہوں اس سے کم لوگ ہی واقفیت رکھتے ہیں۔

جسمانی_بیماریاں۔
👈جسمانی بیماری کا مطلب ہے جو بیماریاں موسمی، وبائی ، یا غلط وقت پہ کھانا پینا یا ناقص کوالٹی کا کھانا کھانے پینے سے ، بے احتیاطی ، جسم میں کسی چیز کی کمی یا زیادتی ، کمزوری یا موٹاپے کی وجہ سے پیدا ہونے والی بیماریاں ، سونے جاگنے کے نامناسب اوقات ،گھر کا اور گھر سے باہر کا ماحول ، نشہ آور چیزوں کا استعمال غیر قدرتی طریقے سے اپنی زندگی کو گزارنا یعنی اپنی من مانی کرنا ، وراثت میں ملنے والی بیماریاں ہماری کوتاہیاں ہمیں جسمانی یا ذہنی بیماری میں مبتلا کرتا ہے جن کا علاج دوائیوں سے ممکن ہے اور کروایا بھی جاتا ہے

دوسری بیماری ہے۔

روحانی_بیماریاں۔

👈روحانی بیماری وہ بیماری ہے جو نہ نظر آنے والی مخلوق ان میں جنات بھوت پریت ، اور بہت سی ہوائی مخلوق ، انسان کے ہاتھوں کئے گئے گندے اور شیطانی عملیات اس کے ساتھ ساتھ ہماری سوچ اور ہماری ہی بد پرہیزیوں کی وجہ سے ہم پہ مسلط ہونے والی بہت سی روحانی بیماریاں جن میں حسد ، تکبر ، بدلہ کے آگ ، بغض ،منافقت وغیرہ وغیرہ شامل ہیں جنات اور بھوت پریت اللہ کی غائب نظر نہ آنے والی مخلوق ہے جسے انسان تو نہیں دیکھ پاتے لیکن وہ مخلوق ہمیں مکمل طور پہ دیکھ سکتی ہے اور انکی حقیقت سے کوئی جاہل گوار بھی انکار نہیں کر سکتا اسکا ذکر قرآن پاک میں کئ جگہوں پہ کیا گیا ہے ہزاروں کی تعداد میں مختلف قسم کی مخلوق دنیا میں موجود ہے لیکن انسانی آنکھ سے اوجھل زمین پر انسانوں سے زیادہ ان دوسری مخلوقات کی تعداد موجود ہے ان میں اتنی طاقت ہے کہ وہ ہمارے گھروں ہمارے جسموں میں با آسانی گھس سکتے ہیں یہاں تک کہ ہمارے خون میں شامل ہو کر ہماری سوچ پر قابض ہو جاتے ہیں اور جسم کے مختلف حصوں میں اپنا مسکن اپنا ڈیرہ بنا لیتے ہیں اور جسم کے کسی نہ کسی حصے کو خراب کرنا شروع کر دیتے ہیں وہاں موجود خون کی نسوں کو بند کر دیتے ہیں جسکی وجہ سے ہمیں نہ ختم ہونے والی بیماریاں لاحق ہو جاتی ہے اللہ نے انکی ایک حد مقرر کی ہوئی ہے ورنہ یہ انسان کو نگل جائیں
چھوٹی بیماریوں سے لے کر کینسر تک کی بیماریاں اسی مخلوق کی پیدا کردہ ہمارے جسم کی خرابی کی وجہ سے روح پزیر ہو جاتی ہیں جو دوائیاں کھانے کے باوجود بھی کچھ دن تک مریض کو سکون آتا ہے اسکے بعد یہ بیماریاں دوبارہ سر اٹھا لیتی ہیں اور ہم اپنے گٹنوں کا درد ورم کمر درد معدے کی خرابی سوزش دل کے امراض پاگل پن وغیرہ وغیرہ کے لئے ساری زندگی ڈاکٹروں کی فیسیں بھرتے رہتے ہیں لیکن لاعلاج ہی رہتے ہیں
روحانی بیماریوں کی چند ایک وجوہات بیان کرتا ہوں

1👉/کسی بھی شخص کا خوشبو لگانا چاہے وہ گھر پر ہے یا گھر سے باہر کی تیاری ہے
ایک مسلمان کی سیکیورٹی آیت الکرسی ہے تین بار پڑھ کر ہاتھوں پہ دم کریں اور پورے جسم پہ پھیریں اسکے بعد پورا دن ہمارا جسم ہر شیطانی مخلوق سے اللہ کی پناہ میں چلا جاتا ہے خوشبو لگاتے ہی آپکے ارد گرد موجود دوسری مخلوق آپکی طرف متوجہ ہو جاتی ہے

2👉/ غسل خانہ گھروں میں ایک واحد جگہ ہے جو شیطانی مخلوق کی سب سے زیادہ پسندیدہ جگہ ہے
بغیر دعا پڑھے غسل یا پاخانہ کیلئے جانا خود اپنے پاؤں پہ کلہاری مارنے کے برابر ہے آپ محسوس کریں گے غسل خانے میں بند ہوتے ہی ہمارا نفس آزادی اور سکون محسوس کرتا ہے کیونکہ اندر گھستے ساتھ ہی پلید اور شیطانی چیزیں ہمارے ننگے جسم کو مزہ دینا اور لینا شروع کر دیتی ہیں اور وہیں سے چاہے وہ بچہ ہے مرد ہے یا عورت انہیں شہوت پہ اکساتی ہیں غور کیجئے غسل خانے میں بعض بچے اور لڑکیاں بہت ٹائم لگاتی ہیں وہاں شیطانی مخلوق انکے جزبات کو ابھارتی ہیں انکو مست رکھتی ہیں اپنے ساتھ

3👉/ مغرب کے وقت سے 15 منٹ پہلے گھر کی تمام روشنیاں روشن کرنا بے حد ضروری ہے جو ہم لوگ نہی کرتے اس وقت غائب مخلوق جھنڈ کے جھنڈ کھلے آسمان کے نیچے سے گزر رہی ہوتی ہیں جیسے شام ہونے سے پہلے تمام پرندے اپنے گھروں کی طرف جاتے ہیں بلکل اسی طرح جب وہ کسی جگہ کو ویران اجاڑ پاتے ہیں اسی سمت ہو لیتے ہیں

4👉/ جب خواتین مرد کے لیئے کھچاؤ اٹریکشن کا زریعہ ہیں تو کیا دوسری گندی مخلوق اس سے دور رہ سکتی ہے؟ ۔۔۔۔۔۔۔۔نہیں …

آج کا لبرل مرد اور خواتین جن کے سامنے زندگی ایک فیشن کا نام ہے ایسے مردوں کے دماغ درست کرنے کی ضرورت ہے جن کے گھر کی خواتین بے نتھے بیل کی طرح بن چکی ہیں جو دل کِیا چل رہا ہوتا ہے چاہے وہ مناسب ہے بھی یا نہیں وجہ گھر کا سربراہ ہے اگر وہی بے حیائی کو بےحیائی نہیں سمجھتا تو عورت کو برا کیوں اور کس لئے کہا جائے ۔

مغرب کے اوقات میں بچیوں لڑکیوں کے بال کھولنے اور کھلے آسمان کے نیچے آنے سے منع کیا جاتا تھا تاکہ انہیں گندی شیطانی مخلوق کے شر سے محفوظ رکھا جا سکے لیکن اب ایسا کچھ بھی نہیں دیکھنے کو ملتا شام ہو رات ہو 60فیصدخواتین کھلے بالوں کے ساتھ بازاروں پارک میں گھر کی چھتوں پہ پائی جاتی ہیں جو ان شیطانی مخلوق کے لئے خود کو بطور چارہ پیش کرتی ہیں اور کسی نہ کسی روحانی مسلہ میں گرفتار ہو جاتی ہیں

5👉/ کوئی بھی کھانے اور پینے والی اشیاء کو بغیر بسم اللہ پڑہے کھایا یا پیا جائے تو ہماری ارد گرد موجود جنات اور بھوت پریت شیطانی مخلوق جو ہماری ہی خوراک میں سے بھی اپنی خوراک نکالتے ہیں اس غذا کو انسان کیلئے مضر صحت بنا دیتے ہیں صرف” بسم اللہ” ہماری خوراک کو محفوظ بنا دیتی ہے
زندگی میں دکھ بھی ہیں اور سکھ بھی اپنی زندگی کو اپنے رب کے بتائے گئے اصولوں کے مطابق گزاریں گے تو 70%بیماریوں سے بچے رہیں گے اپنے بچوں کو فیشن کے ساتھ ساتھ خود کی زندگی خود کی اپنی خوراک کو سکیور کرنے کا طریقہ بھی سمجھائیں اس سے پہلے کہ آپ نہ ختم ہونے والی تکلیف میں مبتلا ہو جائیں۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button