بلاگز

محسن پاکستان ملت اسلامی کی ہیرو (تحریر: حسن جتوئی)

محسن پاکستان اور ملت اسلامی کے ہیرو ڈاکٹر عبدالقدیر خان انتقال فرما گئے ، ہزاروں سوگواروں اور پاکستانی جوانوں نے افسوس کے ساتھ فاتحہ کی ، عبدالقدیر خان صاحب اور عبدالسلام پاکستانی قوم کی دلوں میں چمکتے ہوے سورج کی طرحہ روشن زندہ رہینگے ، پاکستان کے وزیراعظم عمران خان اور دیگر لوگوں نے بھت نہایت دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے ،عبدالقدیر خان وہ انسان تہے جنہوں نے رات دن پاکستان کی بقا کی جنگ لڑی ، عبدالقدیر خان نے ایٹمی ہتھیاروں کا پروگرام بنایا اور پاکستان کو شکتی شالی دیش بنانے میں مدد کی ، قوم اس عظیم ہیرو کو ہمیشہ یاد رکھے گی ، عبدالقدیر خان کا تعلق یوسفزئی قبیلے سے تہا اور وہ نہایت سادگی اور محبت سے پیش آنے والے محب وطن پاکستانی تہے انہوں نے اپنی تمام عمر پاکستان کی بقا کی خاطر کام کیا اور یوں ہی اپنی زندگی کا دیپ گل کر گئے ، ڈاکٹر صاحب نے ایٹمی طاقت حاصل کرنے کے لیئے بڑی محنت کی اور دن رات کام کیا ، گوری ، شاہیں ، اور دیگر میزائل اور ایٹمی ہتھیاروں سے لیکر جوہری ہتھیار عبدالقدیر خان نے بنائے جس کی بدولت دشمن بھارت پاکستان سے ڈرنے لگا اور اس کی چیخیں مریخ ، مشتری ، یورینس پے سنائی دیں ، بھارت نے کوشش کی  کہ وہ پاکستان کو کسی بھی طرح ایٹمی ہتھیاروں سے دور رکھے اور اقوام متحدہ تک بات گئی مگر محسن پاکستان بندش کے باوجود بھی پاکستانی دفاع اور تحفظ کے لیئے کام کرتے رہے حتیٰ کہ ڈاکٹر صاحب کو نظر بند بھی کیا گیا ، قیدیں بھی ہویں اور انہیں سزائیں بھی سنائیں گئیں ، ڈاکٹر صاحب نے ہمیشہ ایمانداری اور نیک نیتی سے کام کیا قوم کو فخر ہے کہ آج پاکستان روشن ستارے کی طرح چمکتا ہوا ابھرتا ہوا ملک ہے جس کے پیچھے ڈاکٹر صاحب کا ہاتھ تہا ، ڈاکٹر صاحب اپنی زندگی مسلمانوں پے وقف کرچکے اور انہوں نے قوم کا سر فخر سے بلند کردیا ، ہندستان اور دیگر اسلام دشمن ممالکوں کے سر پے ڈاکٹر صاحب کا بھوت سوار رہتا تہا انہوں نے بڑی کوشش کی کہ وہ ڈاکٹر صاحب کو خرید سکیں مگر قوم کے عظیم بیٹے نے وہ کر دکہایا کہ جو کوئی نہیں کرسکتا تہا ، ذوالفقار علی بھٹو کی وہ بات سچ کردی کہ گھاس کھا کر بھی ایٹم بم بنائیں گے اور وہ کر دکہایا ،عظیم ہیرو کی عظمت کو سرخ سلام پیش کرتے ہیں دعا ہے جنت الفردوس میں اعلیٰ مقام پائیں قوم آپ کو محسن پاکستان کے نام سے ہمیشہ یاد رکھے گی سورج کبھی ڈہل نہیں سکتا عبدالقدیر خان جیسا مل نہیں سکتاوہ جو روٹے کے سوکھے ٹکڑے کہائیوہ جو قیدوں میں نظر آتش ہو وہ جو سنگ سنگ کانٹوں کی راہ پےاک پھولوں کا گلشن مہکا چکے ہوں وہ جو قوم کو اک تاریخ دیں ان پے سلام ہوں ،

@OfficialhassanJ

اردو گلوبلی

اردو گلوبلی پاکستانی اردو نیوز ویب سائٹ ہے جہاں آپ کو ہر خبر تک بروقت رسائی ملے گی۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button