پاکستان

کابل کے لیے افغانستان کی دھمکیوں کی وجہ سے، پی آئی اے کا فلائٹ آپریشن بند

کابل کے لیے فلائٹ آپریشن کو بند کر دیا گیا ۔ فلائٹ آپریشن بند کرنے کی وجہ افغانستان کی طرف سے ملنے والی دھمکیاں ہے ۔ جس پر آپریشن کو بند کیا گیا۔

پاکستان قومی ایئرلائن کے ترجمان کے مطابق۔ کابل آپریشن اگلے احکامات تک بند رہے گا ۔ افغانستان میں طالبان کے اقتدار میں آنے کے بعد۔ پی آئی اے نے خصوصی آپریشن کر کے افغانستان کی بدلتی ہوئی صورتحال کی وجہ سے تین ہزار افراد کو نکالا ۔ جس میں آئی ایم ایف ۔سمیت دیگر عالمی اداروں اور میڈیا کے اراکین شامل تھے۔
پی آئی اے کے ترجمان نے مزید گفتگو کرتے ہوئے کہا ۔ کہ مشکل حالات کے باوجود ۔پی آئی اے واحد بین الاقوامی ائیرلائن تھی۔ جس کے کپتان اور عملے کے لوگوں نے اپنی جان کو خطرے میں ڈال کر ۔کابل کے لیے آپریشن جاری رکھا۔ اور افغانستان سے لوگوں کو نکالا۔ کابل کے لیے انشورنس کے بغیر فلائٹ آپریشن شروع نہیں کیا جائے گا۔
افغانستان ایوی ایشن اتھارٹی نے ۔پی آئی اے ۔اور افغان ایئر لائن کو خبردار کیا ہے۔ کہ کابل سے اسلام آباد کے درمیان پروازوں کے کرائے کم کرکے 15 اگست سے پہلے والے کی قیمت پر رکھے جائیں۔ نہیں تو اس روٹ پر پروازں کو روک دی جائیں گی۔ افغانستان کی سول ایوی ایشن اتھارٹی نے کہا ۔کہ افغان شہری دونوں فضائی کمپنیوں کی طرف سے کوئی شکایت دیکھیں ۔ تو اتھارٹی کے پاس شکایت جمع کرائیں۔
افغانستان میں موجودہ طالبان کی حکومت میں کرا یا۔ دو ہزار ڈالر تک پہنچ گیا۔ جبکہ اشرف غنی کی حکومت میں کرایہ دو سو سے تین سو ڈالر تھا۔ پی آئی اے نے کہا ہے۔ افغانستان سول ایوی ایشن کے غیر پیشہ ورانہ رویے کے خلاف افغانستان کے لیے فلائٹ آپریشن بند کرنے پر غور شروع کر دیا ہے۔

اردو گلوبلی

اردو گلوبلی پاکستانی اردو نیوز ویب سائٹ ہے جہاں آپ کو ہر خبر تک بروقت رسائی ملے گی۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button