پاکستانکھیل

پاکستان کی کرکٹ پیچھے کیوں چلی گئی؟

‏کرکٹ کی تاریخ اٹھا کر دیکھیے تو پتہ چلتا ہے کہ آسٹریلیا کی کرکٹ ٹیم کامیاب ترین ٹیم ہے جس نے 5 بار عالمی کپ جیتنے کا اعزاز حاصل کیا ہوا ہے

‏پاکستان میں بھی کرکٹ بہت مقبول کھیل ہے اور پاکستان نے بھی کرکٹ کے کئی نامور عالمی کھلاڑی پیدا کیے ہیں جن کی ایک بہت لمبی لسٹ ہیں

‏لیکن کیا وجہ ہے کہ اتنے اچھے کھلاڑی پیدا کرنے کے باوجود بھی پاکستان کی کرکٹ ٹیم کا معیار انتہائی ناقص ہو چکا ہے یہاں تک کہ اب ہم بنگلہ دیش اور افغانستان جیسی ٹیموں سے بھی بڑی مشکل سے میچ جیتتے ہیں

‏آۓ ایک مثال سے آپ کو سمجھانے کی کوشش کرتے ہیں

‏سب سے زیادہ عالمی کپ جیتنے والی ٹیم کے مایہ ناز آل راؤنڈر انڈریو سائمنڈ آسٹریلیا کرکٹ ٹیم کے انتہائی اہم کھلاڑی تھے اور اپنی ٹیم کی فتوحات میں انتہائی اہم کردار ادا کر رہے تھے
‏پھر غالباً 2010 میں انہوں نے اپنے کرکٹ بورڈ کے طے کردہ اصول و ضوابط کا خیال نہیں رکھا اور ان کی خلاف ورزی کر دی

‏جس کے بعد کرکٹ آسٹریلیا نے ان کو ٹیم سے باہر نکال دیا اور اس کے بعد وہ دوبارہ کبھی آسٹریلیا کیطرف سے کرکٹ نہیں کھیل سکے۔ انتہائی اہم کھلاڑی کی ایک غلطی کے باوجود بھی کرکٹ آسٹریلیا نے
‏اپنے قواعد و ضوابط کی خلاف ورزی برداشت نہیں کی اور ان کو ٹیم سے چلتا کیا

‏اور دوسری طرف پاکستان کرکٹ بورڈ ہے جس کے کھلاڑی آۓ دن کوئی نہ کوئی خلاف ورزی کرتے رہتے ہیں لیکن پاکستان کرکٹ بورڈ ان کے خلاف کوئی کاروائی نہیں کرتا۔ عمر اکمل یسے تھرڈ کلاس کرکٹر نے
‏قزافی اسٹیڈیم کے باہر پارکینگ کی وجہ سے انتظامیہ سے بدتمیزی کی اور ملک کی بھی بدنامی کا باعث بنے۔

‏لیکن پاکستان کرکٹ بورڈ نے ان کے خالف کوئی خاطر خواہ کاروائی نہیں کی اور وہ اس کے بعد بھی ملک کی نمائندگی کرتے رہے شاید یہی وجہ ہے کہ آج کرکٹ آسٹریلیا دنیا کی بہترین ٹیموں میں شمار ہوتی ہے اور پاکستان کرکٹ نچلی ترین سطح پر پہنچ چکی ہے

‏اس سے ثابت ہوتا ہے کہ دنیا میں کامیاب صرف وہی ہو گا جو اپنے بناۓ ہوے قواعد و ضوابط پر سختی سے عمل کریں گا اور جو ان پر عمل نہیں کریں گا وہ اپنا بنایا ہوا مقام بھی کھو دے گے

تحریر محمد فرحان

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button