پاکستانصحت

انسانی نشودنما کیا ھوتی بہتر انسانی نشورنما کی کیا علامات ھے۔

ماں باپ کے اوپر سب سے اہم ذمہ داری ھوتی ھے۔کہ وہ بچےکی شخصیت کو بنیاد بنانےمیں کردار ادا کرتے ھے

بنیادی طور پر انسان کی جو خواہشات ھوتی ھے۔ انسان اس کی طرف کی رجوع کرتا ھے۔سکون لیتا ھے۔ اور اس کی جو بنیادی خواہشات ھے۔جس میں جنسی خواہشات۔ بھوک ۔ اور سوچ بھی ھے۔ اسے وہ پورا کرناچاہتا ھے۔

اورظاہر ھے جب وہ خواہشات اٹھتی ھے۔ تو پھر ایگو اور سپر ایگو درمیان میں آجاتی ھے۔پھر ہماری جو سپر ایگو ھے وہ بتاتی ھے خواہشات کو کیسے پورا کرنا ھے۔

اب تھوڑا سا آگے بڑھتے ھے۔ یہ ہی جو پہلا سال یہ ہی چزیں جو انسان کی شخصیت کی جو بنیاد ھے۔ وہ ماں کے پیٹ سے ہی اس کی شخصیت کی بنیاد بننا شروع ھوجاتی ھے۔ پہلے سال میں بچے کے ہر ذاہقہ اس کے منہ میں ھوتا ھے۔ اس لیے جو بھی چیز وہ اٹھاے گا اپنے منہ میں ڈال لے گا۔ جسے ہم کہتے ھے اورل سٹیج۔ اب کہتےھے۔ اگر بچے کو پہلے سال کوی ذہنی صدمہ پہنچ جاتا ھے۔ اور سب سے بڑا صدمہ ماں کی جدای ھے۔

تو بچہ اس face میں اٹک جاتا ھے۔ اورل سٹیج والے جو بچے ھوتے ھے وہ بعد میں جاکر ایک ایسی شخصیت بن جاتے ھے۔ کہ وہ بنیادی چیزوں کی طرف راغب ھوتے ھے۔ اور ان مقصد ھوتا ھے کہ بنیادی جو لذتیں ھے۔ وہی سے حاصل ھوجاے۔

اس لیے زیادہ اپنے مطلب پیچھے کے وہ بھاگتا ھے۔Even جو eating disorderھوتے ھے۔ ان کی جو بنیادیں یہاں تک ان کا سلسلہ پہنچ جاتا ھے۔ پھر وہ بچوں کے اندر فسٹ سٹریشن ان کے اندر log ھوجاتی ھے۔ اسی طرع سے جب بچہ دوسرے سال میں جاتا ھے۔ اچھا پہلے سال جو بچہ ھوتا ھے۔ جس کی اوپر بات کی ھے۔ وہ الگ سی شخصیت بن جاتاھے۔

اس چیز کو ہم آگے بڑھاتے ھے۔ تو دوسرٕے سال میں بچہ جو ھے اسے کنٹرول ھوجاتا ھے۔اپنے پاخانہ کنٹرول کرنے پر یا اسے چھوڑنے پر۔ اس کنٹرول کی وہ مشق کرتا ھے۔اب اگر اس سٹیج پر بچے کے ساتھ کوی نفسیاتی مسلہ ھوجاتا ھے اگر۔ تو ہم کہتے ھے وہ بچہ ایگرشین شخصیت میں تبدیل ھوجاے گا۔

وہ آگے جا کر بچہ دوسرے بچوں میں جلد مکس اپ نہیں ھوپاے گا۔ ان کے ساتھ اچھا تعلق رکھنے میں ناکام ھوجاے گا۔ عام طور پر اس بچے کے اندر ایک غصہ کی کفیت پیدا ھوجاے گی۔ اسی طرع سے ساری گفتگو کا مقصد یہ ھے۔

کہ پہلےجو پانچ سال ھے۔بچے کی شخصیت بنانے میں بہت اہم ھے۔ اور اس کی جو مکمل ذمہ داری ھے وہ ماں باپ کے اوپر ھوتی ھے۔ کیونکہ بچے نے پانچ سال کے بعد سکول جانا ھوتا ھے۔

یہ جو پانچ سال اس نے ماں کے ساتھ گزارنے ھے۔ تو یہ سٹیج ایسی ھوتی ھے۔جہاں والدین زیادہ توجہ دے کر بچے کی شخصیت بناتے ھے۔ تاکہ اس کی شخصیت مکمل شخصیت بنے۔

اب اس میں سب سے بڑا مسلہ بچے کے ساتھ کیا ھوتا ھے۔ جسے والدین بھی نظر انداز کرتے ھے۔اگر بچہ 2 سال یا ڈیڑھ سال کا ھے۔اور اس دوران اس کا نیا بہن بھای پیدا ھوجاتا ھے۔مناسب وقفہ نہیں رکھا جاتا بچوں کی پیداش میں تو۔

ماں کی تمام تر توجہ چھوٹے کی جانب ھوجاتی ھے۔ تو بڑے بچے کی ذہنی نشورنما ڈسٹرب ھوجاے گی۔ کیا ھوگا اگر وہ بچہ 3 سال کا ھے۔ لاشعوری طور پر اس نے خود کھانا شروع کیا ھے۔خود چھوٹا کام کرسکتا ھے۔

لیکن جب وہ دیکھے گا کہ چھوٹا بہن بھای آگیا ھے ۔ ماں کا رجحان اس کی طرف ھوگیا ھے۔ تو ماں باپ کی توجہ حاصل کرنے کے لیے وہ پیچھےکی طرف جاے گاجسے ہم ری گرشین۔ دوبارہ بستر پر پیشاب کرنا شروع کر دے گااپنا کھانأ خود کھانا چھوڑ دے گا۔ ماں ہی کھلاے۔ اس میں ضد پیدا ھوجاے گی تو اسطرع یہ وہ عوامل ھے۔ ع بچے مظبوطی کرتے ھے۔ تو اس لیے 2 بچوں کے درمیان تین سے چار سال کا وقفہ رکھیں۔
کہ بچہ تھوڑا خود مختیار ھوجاتا ھے۔ اور چھوٹے بہن بھاہیوں کو قبول کرنے لگتا ھے۔ تو پھر اس کی ایک ایسی شخصیت پیداھوتی ھےجس میں ایک خود اعتمادی پیدا ھوتی ھے۔

ماں باپ کے اوپر سب سے اہم ذمہ داری ھوتی ھے۔کہ وہ بچےکی شخصیت کو بنیاد بنانےمیں کردار ادا کرتے ھے۔ خود اچھے موڈ اور مزاج میں رہے ۔اور بچے کو کو بھی اچھا ماحول دے۔ بچے کی صحت بنانے میں خوراک ضروری ھے۔ اور ذہنی صحت کے لیے گھر کا ماحول اچھا ھونا

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button