بلاگز

جرم کیا ھوتا ھے۔ جرم کی نفیسات کیا ھے۔

جراہم کی بہت سی وجوہات ھوتی ھے۔

جرم سے مرادکسی دفاع اور جواز کے بیغر ارادی طور پر فوجداری قانون کی خلاف ورزی کرنا ھے۔

سادہ الفاظ میں یوں کہیے کہ راہج قانون کی خلاف ورزی کرنا جرم کہلاتا ھے۔
مجرم۔

جرم کا ارتکاب کرنے والے شخص کو مجرم کہا جاتا ھے۔

ملزم۔

وہ شخص جس پر شک ھو اس نے جرم کیا ھے۔ مگر ابھی جرم ثابت نا ھوا ھو۔ اس کو ملزم کہتے ھے۔

مجرمین کی جماعت بندی۔

نفسیات میں لمبرا سو کی جماعت بندی بڑی اہمیت کی حامل ھے۔

پیداشی مجرمین۔

لمبرا سو کے نزدیک کہی لوگ پیداشی طور پر جراہم کا ارتکاب کرنے کا شدید رجحان پایاجاتا ھے۔ کیونکہ لوگ ارثیاتی اعتبار سے جسمانی اور نفسیاتی طور پر اپنے قدیمی۔ اور نیو نسل کے درمیان شکل میں پیدا ھوتے ھے۔ ایسے لوگ جراہم کا ارتکاب کرتے ھے۔

عادی یا پیشہ وارانہ مجرم۔

جو مجرم باقاعدہ پرگرام کے تحت جرم کرتےھے۔ اور جراہم کو پیشے کے طور پر اختیار کرتے ھے۔ لمبرا سو جیلوں کو کریمنل یونیورسٹی کا نام دیتا ھے۔ جو پیشہ ور مجرم بنانے میں نمایاں رول ادا کرتی ھے۔ بعض ماہرین کے نزدیک پیشہ ور مجرمین کویہ پیشہ وراثت میں ملتا ھے۔ جیسے عام طور پر خرکار کا بیٹا خرکار ۔ جیب کترے کا بیٹا جیب کترا۔ بعض دفعہ اتفاقی طور ہر فرد مجرمین کے چنگل میں پھنس کر پیشہ ور مجرم بن جاتے ھے۔
اس کے بعد ہم بات کرتے ھے۔

پرجوش اور جذباتی مجرمین۔

ایسے مجرمین جو عزت وقار ۔ یا شدید مہبت کی وجہ سے جرم کا ارتکاب کرتے ھے۔ جیسے نسلی لسانی۔ فرقہ ورایت کے فساد ۔ الگ وطن کے لیے قتل و غارت۔ اور خاندانی یا مذہبی عزت و وقار کے نام پر کیے جانے والے جراہم ۔

کمزور فطرت مجرمین۔

جو بری محفل یا ماحول کا جلدی اثر قبول کرکے جراہم کا ارتکاب کریں۔

تحریکی مجرمین۔

ایسے مجرمین جو ھوش مندی سے کام نا لینے۔ اور اپنے اختیارات برتتے وقت نتاہج سے بے خبری کی وجہ سے جرم کا ارتکاب کریں
واقعاتی مجرمین۔
ایسے مجرمین جن کوحالات مجرم بنا دیتے ھو۔

کمسن مجرمین۔
ایسے مجرمین جن کی عمر پندرہ سال سے کم ھو۔

واہٹ کالر مجرمین۔
ذہین اور پڑھے لکھے مجرمین ۔ جو جرم کے تمام نشانات مٹا دیتے ھے۔ اور کسی نا کسی انداز میں قانون کے تقاضے بھی پورے کردیتے ھے۔

تربیت یافتہ مجرمین۔
تخریب کار دہشت گرد اور دیگر ایسے مجرمین جہنون نے جراہم کی باقعدہ تربیت حاصل کی ھو۔ یہ سب سے زیادہ خطرناک ھوتے ھے۔

جراہم کی نفیساتی وجوہات۔
جراہم کی بہت سی وجوہات ھوتی ھے۔

نمبر1. وراثت۔ کچھ لوگوں کوجراہم وراثت میں ملتے ھے۔
نمبر2. ماحول۔ جراہم پیشہ لوگوں کی صبت یاان کےعلاقوں سے تعلق فرد کو مجرم بنا دیتی ھے۔

نمبر3. آب وھوا اور جغرافیای حالات۔ بقول ہیلی سخت آب وھوا ۔ جنگلی ماحول۔ دریای بیلے۔ اور بعض پہاڑی علاقوں کے بچوں اور نوجوانوں کوجراہم پیشہ بنا دیتے۔

نمبر4.بے حس لوگ۔ نفسیاتی بے حس لوگ۔ سماجی بے حس لوگ۔ سماجی اور تہذیبی قدروں کی پروا نہیں کرتے۔ اور جراہم کا انتخاب کرکے خوشی محسوس کرتے ھے۔

نمبر5.منشیات۔ نشے کے عزاہم بڑے جارحانہ ھوتے ھے۔ اور اس کی زندگی کا انداز غیر مہذب ھوتا ھے۔ اس کے علاوہ ان کو نشے کے لیے پیسہ بھی چاہٕے۔ یہ سارے عوامل جراہم کا باعث بنتے ھے

نمبر.6.ذراہع ابلاغ۔ ذراہع ابلاغ مجرمین کو ھیرو کے طور پر پیش کرتے ھے۔ چنانچہ بہت سے نوجوان ان کو رول ماڈل بنا کر پیش کرتے ھے۔

نمبر۔7. دیگروجوہات۔ ذہنی پسمنادگی اور ناقص آموزش مجرمین کی سرپرستی۔ بے روزگاری۔ خاندانی ماحول ۔ جیسی بہت اور وجوہات جراہم کا باعث بن رہی ھے

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button