بلاگز

عید میلادالنبیؐ کی خوشیاں صرف ایک دن ہی کیوں ساری زندگی کیوں نہیں۔؟

خدا کی شان ہے کہ حضور صلی الله عليه وسلم کی ولادت سے قبل ہی والد کا سایہ سر سے اٹھا دیا اور آپکو یتیم پیدا کیا تاکہ دنیا کو معلوم ہوجائے کیلہ میرا محبوب کسی دنیاوی سہارے کا محتاج نہیں بلکہ ہی سے ان کی تربیت وہ ہستی کرے گی جس نے انکے سر پر ختم نبوت کا تاج سجانا ہے ۔شاعر کیا خوب کہا ہے:پیدا ہوئے تو باپ کا سایہ اٹھادیاگھٹنوں چلے تو دادا عدم کو روانہ تھاسائے پسند نہ آئے پروردگار کوبے سایہ کردیا گیا اس سایہ دار کوتاکہ اس مکتب توحید مین آپ کو ابو ابو پکارنے کی عادت نہ پڑے بلکہ احد احد پکارنے کی عادت پڑجائے۔کسی کے گھر بچہ پیدا ہو تو دوست احباب اور رشتہ دار مبارک دیتے ہیں لیکن عبداللہ کے گھر ایک یتیم کی پیدائش پر ملائکہ مبارکباد دینے آتے ہیں۔۔ سبحان اللھتاریخ کے اوراق کھنگالیں اور دیکھیں آپ کی آمد سے پہلے اس دنیا میں کیا تھا۔۔؟ ظلم ہی ظلم تھا۔۔کفروشرک کا رواج تھا۔۔قتل و غارت عام تھا۔۔ بیٹیوں کو زندہ درگور کیا جاتا تھا جس کی لاٹھی اسکی بھینس کا قانون تھا۔الغرض۔۔ انسانیت تباہی اور بربادی کے آخری دہانے پر پہنچ چکی تھی۔ لیکن آپ کی تشریف آوری سے ایک انقلاب بپا ہوگیا۔ کل جو ایک دوسرے کی جان کے درپے تھےبھائی بھائی بن گئے۔۔ بھائی چارے کی ایک خوبصورت فضا قائم ہوگئ۔۔کل جس بیٹی کو زندہ درگور کرنا معیوب نہ تھا اسے ایک عظیم رتبہ اور مقام ملا۔ سینکڑوں ہزاروں کے پجاریوں کو ایک در پہ جھکا دیا مختصر یہ کہ زندگی کا پورا نظام بدل کرکہ رکھ دیا ا2ر ایک عظیم انقلاب پیدا کیاآج بھی ہمارےلئیے ان کی زنگی میں ایک بہترین نمونہ موجود ہے۔ آج بھی وہی ہدایت اور وہی دعوت موجود ہے لیکن پھر بھی ایک بھائی دوسرے بھائی کا گلا گھونٹ رہا ہے۔ ایک مسلمان دوسرے مسلمان کا گھر اور دکان جلا رہا ہے اور لوٹ رہا ہے ایک دوسرے کی آبرو کو پامال کیا جارہا ہے۔ ہر طرف خودغرضی کا بازار گرم ہے۔اسکی وجہ یہ ہے کہ ہم نے آپ کی زنگی کو آپ کی سنت کو اپنانے کے بجائے یورپ کے کلچر کو ترجیح دی۔ ورنہ سیرت کے جلسے بہت ہورہے ہیں۔ عید میلادالنبیؐ کیلئے بڑے بڑے جلوس نکالے جارہے ہیں لیکن وہ ماحول نہیں بن رہا جو صحابہ کے دور میں تھا۔ چنانچہ وہ ماحول پیدا کرنے کیلیے ہمین آپ کی سنت کو اپنانا ہوگا اسی میں ہمارا علاج ہے۔آج ہم گلیوں اور کوچون کو تو چراغاں کررہے ہیں لیکن د اپنے دل کالے ہوچکے ہوئے ہیں۔ میلاد منانے کیلئے ایک دن مسلمان ہوجاتے ہیں باقی پورا سال نہ نماز پڑھتے ہیں اور نہ ہی کوئی مسلمانی کا کام۔ارے۔۔! کسی ایک دن ہیں عید میلادالنبیؐ کیوں۔۔۔؟؟؟ ساری زندگی کیون نہیں۔۔۔۔؟؟؟ کیونکہ ہمیں جس کا امتی بنایا گیا ہے اس پر تو ہمیں ساری زندگی خوشیاں منانی چاہئیں

تحریر:- نجیب اللہ

اردو گلوبلی

اردو گلوبلی پاکستانی اردو نیوز ویب سائٹ ہے جہاں آپ کو ہر خبر تک بروقت رسائی ملے گی۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button