صحت

ٹاسک فورس کے مطابق صحت مند افراد کا اسپرین کا روزانہ استعمال مناسب نہیں

آسپرین خطرناک دوائی نہیں ہے ۔ لیکن اس کا غیر ضروری استعمال خطرناک سکتا ہے۔

صحت مند افراد کا روزانہ کی بنیاد پر اسپرین کا استعمال خطرناک ہے

ٹاسک فورس کی گائیڈ لائن میں یہ واضح کہا گیا ہے۔ کہ جو اسپرین کے استعمال سے جو تحقیقات پتہ چلی ہیں ۔ کہ صحت مند افراد کا روزانہ کے لئے استعمال خطرناک ہے۔ یو ایس پی ایس ٹی ایف۔ نے اپنی گائیڈ لائن میں یہ بات واضح کی ہے۔ کہ 40 سال سے بڑے عمر کے افراد خبردار رہیں۔ اس کے استعمال سے۔ جن میں کوئی دل کی بیماری نہیں ہے مگر وہ احتیاط کے طور پر 80 ملی گرام اور سو ملی گرام جتنی اسپرین روزانہ استعمال کر رہے ہیں ۔ وہ ان کے لئے خطرناک ہو سکتی ہے۔ ٹاسک فورس کا یہ بھی کہنا ہے کہ ۔ جو مریض ڈاکٹر کے مشورے کے مطابق اسپرین استعمال کر رہے ہیں۔ وہ اپنے شیڈول میں تبدیلی نہ کریں۔ نئی ہدایات جو ہیں وہ صرف صحت مند افراد کے لیے ہیں۔
مزید کہا گیا ہے ۔ کہ اگر چالیس سال سے زیادہ عمر کے افراد میں کسی بھی شخص کو جو صحت مند ہو ۔ دل کے دورے اور فالج کے امکان 10 فیصد تک ہیں ۔ تو اسے فورا اپنے ڈاکٹر کے پاس مشورہ کرنا چاہیے۔ اور مشورے کے بغیر روزانہ اسپرین کا استعمال نہیں کرنا چاہیے۔اسپرین کاغیر ضروری استعمال نقصان دہ ہو سکتا ہے ۔ جبکہ آسپرین خطرناک دوائی نہیں ہے ۔ لیکن اس کا غیر ضروری استعمال خطرناک سکتا ہے۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button