بلاگزسیاست

عمران خان اور لوڈشیڈنگ تحریر محمد احسان

ملک میں اس وقت ‏‎بجلی کی پیداوار 32 ہزار میگا واٹ ہے اب آپ اسے استعمال کریں یا نہ کریں آئی پی پیز کو ادائیگی کرنی پڑے گی .۔ کیونکہ یہ بجلی درآمدی فیول سے بنتی ہے لہذا فیول پرائسز بڑھنے سے بجلی کی قیمت بھی بڑھ جاتی ہے۔۔ اور گورنمنٹ کو بجلی کی قیمتوں میں اضافہ کرنا پڑتا ہے۔۔ جس پر چھر عوام اور مخالفین کی چیخیں نکلتی ہیں۔۔
کم بجلی بنائیں تو لوڈشیڈنگ اور زیادہ بجلی بنائیں تو قیمتیں زیادہ۔۔ اس طرح کے ھ رام خور معاہدے کر کے گئے ہیں آئی پی پیز سے مخالفین کے ھ رام خور لیڈر۔۔۔ عوام کا خون نچورنے والے معاہدے صرف اس لئے کر کے گئے ہیں تا کہ آنے والی گورنمنٹ فیل ہو جاے۔ صرف عمران خان کے بغظ میں ملک و قوم سے اس طرح کی غداری اور عیاری کر کے گئے ہیں اور بے عقل مخالفین اور عوام سمجھتے ہیں کہ عمران خان جان بوجھ کر مہنگائی کر رہا ہے۔۔
اب عمران خان کیا کرے کیا پچھلی حکومت کی طرح ملکی اثاثے گروی رکھ دے؟ کیا قرضوں پر قرضے لیتا جاے؟؟ کیا آنے والی نسل کو پھر ویسا ہی دیوالیہ پاکستان دے کر جاے جیسا عمران خان کو ملا تھا۔۔
مخالفین سن لیں تم لوگوں کو بھی اللہ نے تھوڑی سی عقل شاید دی ہو تو عقل استعمال کر کے سوچو اپنے لیڈروں کے کرتوت۔۔ اللہ تم لوگوں کو ھدایت دے۔۔
ويسے بھی یہ قرضہ تو عوام نے اب اتارنا ہی ھے۔۔۔
تحریر۔۔۔۔ محمد احسان

اردو گلوبلی

اردو گلوبلی پاکستانی اردو نیوز ویب سائٹ ہے جہاں آپ کو ہر خبر تک بروقت رسائی ملے گی۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button