پاکستان

پاکستان کا ایک ایسا گاؤں ہے جہاں پر زیادہ تر شہری پڑھ لکھ کر ججز اور افسران بنتے ہیں

اور یہ گاؤں مذہبی ہم آہنگی کا گہوارہ بھی ہے

پاکستان میں ایک ایسا بھی گاؤں ہے جہاں کا لٹریسی ریٹ سو فیصد ہے

پاکستان کی اس جگہ کو لینڈ آف ججز بھی کہتے ہیں۔ اور یہ خوشاب کی تحصیل نور پور تھل کا 32 ہزار ایکڑ رقبہ اور بیس ہزار کی آبادی والا گاؤں پیلووینس جو بنیادی سہولیات سے محروم ہے۔ مگر گاؤں کا ایک بھی فرد ایسا نہیں ہے جو بنیادی تعلیم سے محروم ہو۔ پیلووینس کو اس علاقے کے لوگ لینڈ آف ججز کہتے ہیں۔
اس لئے کہ وہاں 20 ہزار سے زائد لوگ عدلیہ میں بطور جج فرائض انجام دے رہے ہیں۔ جب کہ ایک درجن سے زیادہ افراد سی ایس پی اور ایف بی آر سمیت مختلف سرکاری اداروں میں اعلی عہدوں پر اپنے فرائض انجام دے رہے ہیں ۔جبکہ پیلووینس کے لوگوں کا ذریعہ معاش کھیتی باڑی کالا چنا اور گندم علاقے کی اہم فصل ھے۔
گاؤں کے آج بھی 80 سے زائد وکلاء اور درجنوں اساتذہ مقابلے کے امتحانات کی تیاریوں میں مصروف ہیں۔ اور یہ گاؤں مذہبی ہم آہنگی کا گہوارہ بھی ہے۔ گاؤں کے افراد کا کہنا ہے کہ ان کو اچھے اساتذہ ملے۔ تعلیم کے شوق نے غربت کے باوجود علاقے کے لوگوں کو اہل عہدوں پر فائز کر دیا

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button