پاکستان

طالبہ سے زیادتی کے بعد قتل کے جرم میں مجرم کو سزائے موت کی سزا

ملزم کو چار سال بعد 2019 میں پولیس نے گرفتار کرلیا

نواحی گاؤں33 ٹو آر اوکاڑہ میں بی اے کی طالبہ کے ساتھ زیادتی اور پھر قتل کے مقدمے کا فیصلہ مکمل

ایڈیشنل جج رانا سہیل نے عدالت میں مجرم زین کو سزائے موت اور جرمانے کا حکم سنایا مجرم زین 33 ٹو آر نے طالبہ شازیہ لیاقت کو 2015 میں اس وقت اغوا کیا تھا جب وہ کالج سے چھٹی کے بعد گھر جا رہی تھیں ملزم لڑکی کو فصل کماد میں لے گیا جہاں پر اس نے طالبہ کو زیادتی کا نشانہ بنایا اور پھر گلہ دبا کر فرار ہوگیا طالبہ کے ورثا اسے تلاش کر رہے تھے جس کی لاش دو روز بعد فصل کماد سے برآمد ہوئی جس میں نامعلوم افراد کے خلاف مقدمہ درج کرکے لاش پوسٹ مارٹم کے بعد ورثا کے حوالے کر دی تھی پولیس اور ورثہ کی کوششوں پر ملزمان کی پہلی بیوی کی نشاندہی پر ملزم کے خلاف طالبہ کے قتل اور زیادتی کا مقدمہ درج کرلیا گیا ملزم کو چار سال بعد 2019 میں پولیس نے گرفتار کرلیا

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button