بلاگز

محبت رسول محمــﷺــد

یا رب محمــﷺــد سے محبت کچھ اس طرح سے ہو
میری ہر صبح و شام کا اختتام کچھ اس طرح سے ہو۔
دھڑکے جو دل میرا ان کی یاد میں ۔
کیسی دن کی صبح پھر سے دیدار مصطفی ﷺ سے ہو۔۔

محبت رسول.ﷺ کا مطلب ہے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے سچی محبت کرنے والا، نبی ﷺ کی اداوٴں پر مر مٹنے والا، نبیﷺ کی سنتوں کو اپنانے والا، نبی.ﷺ کی اطاعت و فرماں برداری میں دل و جان نچھاور کرنے والا، نبی.ﷺ کے قول و عمل کی خلاف ورزی سے بچنے والا اور پوری زندگی سنت کے مطابق گذارنے والا ہو
آپﷺ اپنی امت سے اتنی فرماتے تھے اتنی تو شاید کوئی ماں بھی اپنی اولاد سے نہیں کرتی ہو گی ہر پل ہر لمحے امت کی فکر اللہ اکبر ۔یہ کیا اس رب کا ہم پر خاص کرم نہیں ہے جو اس نے اپنا محبوبﷺ ہم کو عطا فرما دیئے۔ہم نےمعاذاللہ محبت اور عمل کو ترک کر کے نور اور بشر کی بےحس کو انتخاب کرلیا ۔ہم نے فرقوں کو انتخاب کر لیا۔ہم نے اپنے محبت کے طریقے سیکھانے شروع کر دیئے ۔
ہم کون ہوتے ہیں ہماری کیا اوقات ہے جو ہم اس بڑی شان والے جن کے لیے خود پروردیگار فرما رہا ہے اپنے قرآن کریم میں
وَمَاۤ أَرۡسَلۡنَـٰكَ إِلَّا رَحۡمَةࣰ لِّلۡعَـٰلَمِینَ ہم نے آپ کو تمام جہانوں کے لیے رحمت بنا کے بھیجا ۔۔
نعمت کا حساب ہے رحمت کا حساب نہیں ۔۔تو ہم کیوں اپنی آخرت کو خراب کرنے پر تلے ہیں ہماری کیا اوقات جو ہم یہ فیصلہ کر سکیں نور ہیں یا بشر۔ہمیں ہماری نہیں پتہ ہم کتنے سچے پکے مسلمان ہیں۔میرے نبی محمــﷺــد کی محبت ایک میٹھاس ہے میٹھاس کو محسوس کیا جاتا ہے نام نہیں دیا جاتا ۔۔جس طرح شہد کو پیا جاتا ہے مکھی کی نسل کی فکر نہیں ہوتی ایسی طرح بس پیروی کرو اللہ اور اس کے رسول محمــﷺــد کی..دوسری جگہ اللہ ربالعزت فرماتے ہیں
وَرَفَعنا لَکَ ذِکرَک۔۔اور ہم نے تمھاری خاطر آپ کا ذکر بلند کر دیا ۔۔یہ نعوذ بالله دعوی ہی نہیں ہے ایک حقیقت ہے ۔۔
کیونکہ نعمت کا حساب ہے رحمت کا حساب نہیں ۔۔یہ اس سال کی رپورٹ ہے ۔۔
برلن(مانیترنگ ڈیسک ) جرمنی کے شہربرلن میں گزشتہ سال پیدا ہونے والے زیادہ تر بچوں کے نام ’محمد‘ رکھے گئے ہیں۔ اعداد و شمار کے مطابق برلن میں 2018 کے دوران 22177 بچے پیدا ہوئے جن میں سے بیشتر کے نام آقائے دو جہاں حضرت محمد مصطفیٰﷺ کے نام مبارک پہ رکھے گئے۔برلن میں دوسرا پسندیدہ نام لوئس اور تیسرا پسندیدہ نام ایمیل ریکارڈ کیا گیا ہے۔زندگی تمام ہو جائے گی اپﷺ کے مبارک پہلو پر گفتگو ختم نہیں ہو گی ۔کیونکہ نعمت کا حساب ہے رحمت کا حساب نہیں ۔۔
رسول اللہﷺ نے فرمایا کہ’’ تم میں سے کوئی بھی اُس وقت تک کامل مومن نہیں ہوسکتا، جب تک وہ اپنے والدین، اولاد اور تمام لوگوں سے زیادہ مجھ سے محبّت نہ رکھے‘‘ اور یہ بات مسلّم ہے کہ کسی کا بار بار اور اچھے الفاظ میں تذکرہ محبّت میں اضافے کا باعث ہے۔ نیز، جس سے محبّت کی جاتی ہے، اُس کی زندگی کا احوال جاننا بھی ضروری ہے۔ قرآنِ کریم میں جہاں اللہ پر ایمان لانے کا حکم ہے، وہیں رسولؐ پر ایمان لانے اوراُن کے نقشِ قدم پر چلنے کا بھی حکم ہے۔ نقشِ قدم پر چلنے کے لیے ضروری ہے کہ اُن کی حیاتِ پاک سے واقفیت ہو۔ آپﷺ کی زندگی میں ہر شعبے سے وابستہ افراد کے لیے رہ نُمائی ہے۔ آپ ﷺداعی تھے اور مربّی بھی، قاضی تھے اور زاہد بھی، سیاست دان تھے اور حکم ران بھی، سپاہی تھے اور رہ نُما بھی، باپ اور شوہر تھے، لہٰذا اگر آپ داعی ہیں،۔۔لاکھوں کروڑوں درود ان پر سلام ان پر۔۔‏ اللَّهُمَّ صَلِّ عَلٰی سَيِدِنَا مُحَمَّدٍ وَّعَلٰٓی اٰلِہٖ وَسَلِمُ ۔۔❤❤💚
اللہ ربالعزت ہم کو فتنوں سے فرقوں سے اپنی پناہ میں رکھے اور اللہ اور رسول محمــﷺــد کی حقیقی محبت نصیب فرمائے آمین ثمہ آمین ۔۔❤❤❤محمد علی شیخ ۔۔

اردو گلوبلی

اردو گلوبلی پاکستانی اردو نیوز ویب سائٹ ہے جہاں آپ کو ہر خبر تک بروقت رسائی ملے گی۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button