بین الاقوامی

افغان آبادی کے 55 فیصد افراد کو خوراک کے بحران کا سامنا ہے

ملک بھر میں جھڑپوں اور تشدد سے شہری کے متاثر ہونے اور ہلاک ہونے کی اطلاعات بھی سامنے آئی ہیں

سیکرٹری جنرل نائب ترجمان فرحان حق نے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ افغانستان میں جھڑپیں اور تشدد جاری ہے انہوں نے مزید کہا کہ رضاکاروں نے خبردار کیا ہے کہ دو کروڑ تیس لاکھ افغان آبادی کا 55 فیصد مارچ 2021 اور مارچ 2022 کے درمیان بحران سطح پر غذای قلت کا شکار ہو سکتے ہیں ہیں افغانستان میں انسانی بحران کی وجہ سے پاکستان کو مہنگائی کا سامنا کرنا پڑے گا انہوں نے کہا کہ ہمارے ساتھی ہمیں بتاتے ہیں کہ ملک بھر میں جھڑپیں اور تشدد کی اطلاعات موصول ہو رہی ہیں جس سے عوام متاثر ھورہے ہیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button